اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

18 مارچ، 2019

پاکستان تحریک انصاف کے ضلعی دفتر کا افتتاح۔ ضلعی سیکرٹریٹ کا مقصد دور دراز سے آئے ہوئے درخواستیوں کے مسائل حل کرنے کیلئے حکام تک پہنچانا ہے۔ ضلعی صدر عبد الطیف۔

 

پاکستان تحریک انصاف کے ضلعی دفتر کا افتتاح۔ ضلعی سیکرٹریٹ کا مقصد دور دراز سے آئے ہوئے درخواستیوں کے مسائل حل کرنے کیلئے حکام تک پہنچانا ہے۔ ضلعی صدر عبد الطیف۔ 

چترال (گل حماد فاروقی) پاکستان تحریک انصاف نے نئے دفتر کا افتتاح کیا۔ نیا دفتر عبد الولی خان پاس روڈ پر واقع اتالیق چوک کے قریب ایک ہوٹل میں دوسرے منزل پر کھولا گیا۔ نئے دفتر کا فیتہ ضلعی صدر عبد الطیف نے کاٹ کر باقاعدہ افتتاح کیا۔اس موقع پر سینئر سیاستدان بھی موجود تھے جن میں ریٹائرڈ صوبیدار محمد علی جناح لال آیون، خیر الرحمان گولدور، صوبیدار حسن تراب مستوج، حاجی گل نواز دروش، زلفی ہنر شاہ لاسپور اور سردار حکیم بھی موجود تھے۔ 


نئے دفتر کھولنے کی خوشی میں کارکنوں میں مٹھائی بھی تقسیم کی گئی۔ اس موقع پر ہمارے نمائندے سے باتیں کرتے ہوئے ضلعی صدر عبد الطیف نے بتایا کہ اس دفتر کا بنیادی مقصد دور دراز سے آنے والے سائلین اور ان لوگوں کے مشکلات حل کرنا ہے جو صوبائی یا مرکزی حکومت کو کوئی درخواست بھیجنا چاہتے ہیں کیونکہ ان لوگوں کو ان متعلقہ دفاتر کے ایڈریس معلوم نہیں ہوتا تو اس سیکرٹریٹ سے وہ درخواست متعلقہ محکمہ کے پتہ پر بھیج دیا جائے گا۔

اپر چترال کے صدر آفتاب احمد سے جب پوچھا گیا کہ صوبائی حکومت نے نئے ضلع کا اعلان کیا ہے مگر ابھی تک عملہ بھرتی نہیں ہوا، نہ عمارت تعمیر کی گئی تو ان کا کہنا تھا کہ بہت جلد عملہ بھی بھرتی کیا جائے گا اور عمارت بھی تعمیر ہوگی۔ 

نئے دفتر کھولنے کے موقع کثیر تعداد میں پاکستان تحریک انصاف کے کارکنوں نے شرکت کی۔ 



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں