اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

6 مارچ، 2019

ہندو برادری کے خلاف ناشائشہ زبان کے استعمال پر فیاض الحسن چوہان سے استغفیٰ لے لیا گیا، صمصام بخاری نے وزیر اطلاعات پنجاب کا حلف اٹھا لیا

ہندو برادری کے خلاف ناشائشہ زبان کے استعمال پر فیاض الحسن چوہان سے استغفیٰ لے لیا گیا، صمصام بخاری نے وزیر اطلاعات پنجاب کا حلف اٹھا لیا




لاہور (نیوز ڈیسک) ہندو برادری سے متعلق متنازع اور غیر شائشہ بیان پر وزیر اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان سے وزیر اعلیٰ نے مستغفی ہونے کا حکم دیا تھا جس پر چوہان نے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔

موجودہ حالت میں ایک وزیر کی جانب سے ایک برادری کے خلاف بیان بازی جو کہ اقلیت میں پاکستان میں بھی موجود ہو، غلط اور نا شائشتہ امر ہے۔ ایسے حالات میں ہمیں دنیا کے سامنے مثال بننا چاہئے کہ ہمارے ملک میں سب کو برابری کے حقوق میسر ہیں۔ اگر کسی برادری کو زبان اور ہاتھوں سے نشانہ بنائیں گے تو کس منہ سے ہم کشمیر اور ہندستان میں موجود مسلمانوں کے حق میں آواز بلند کرسکتے ہیں۔

فیاض الحسن چوہان نے بھارتی جنگی جنون کے خلاف تقریر کرتے ہوئے کہا تھا کہ گائے کا پیشاب پینے اور بتوں کو پوجنے والے ہم سے نہیں لڑسکتا۔ 

ہندو برادری سے متعلق بیان پر فیاض الحسن چوہان مشکل میں پھنس گئے تھے، بیان عمران خان کو بھی ناگوار گزرا جس پر وزیراعظم عمران خان کے حکم پر وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے فیاض الحسن چوہان کو طلب کیا تو انہوں نے ایوان وزیراعلیٰ میں عثمان بزدار سے ملاقات کی اور وضاحت پیش کی۔

ترجمان وزیراعلی پنجاب شہباز گل کے مطابق عثمان بزدار نے ہندو کمیونٹی کے حوالے سے بیان پر فیاض چوہان پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے استعفیٰ طلب کیا۔ ملاقات کے بعد فیاض الحسن چوہان نے عہدے سے استعفیٰ دے دیا جسے فوری طور پر منظور کرلیا گیا۔ ترجمان شہباز گل کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب نے ہندو کمیونٹی سے ہمدری اور معذرت بھی کی ہے۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے بھی وزیر اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان کے اقلیتی برادری کے خلاف متنازع بیان پر ناراضگی کا اظہار کیا ہے اور وزیراعظم کی ہدایت پر ہی فیاض الحسن چوہان سے استعفی لیا گیا ہے۔ فیاض الحسن چوہان نے اس دوران عمران خان سے رابطہ کرکے انہیں منانے کی کوششیں بھی کیں جو ناکام ثابت ہوئیں۔ اب صمصام بخاری کو صوبائی وزیر اطلاعات بنائے جانے کا امکان ہے۔

یہ ہے وہ بیان جس پر چوہان اپنی وزارت سے ہاتھ دھو بیٹھا




کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں