اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

17 اپریل، 2019

چترال: بونی چترال روڈ ہر قسم ٹریفک کیلئے کھول دیا گیا۔ جشن قاقلشٹ کے موقع پر سڑک ہر قسم ٹریفک کیلئے کھلا رہے گا تاکہ سیاحوں کو کسی قسم کی تکلیف کا سامنا نہ ہو۔ ایس ڈی او عتیق فاروق

 

چترال: بونی چترال روڈ ہر قسم ٹریفک کیلئے کھول دیا گیا۔ جشن قاقلشٹ کے موقع پر سڑک ہر قسم ٹریفک کیلئے کھلا رہے گا تاکہ سیاحوں کو کسی قسم کی تکلیف کا سامنا نہ ہو۔ ایس ڈی او عتیق فاروق 


چترال (گل حماد فاروقی) چترال میں چار دن مسلسل بارشوں کے بعد محتلف ندی نالیوں میں طغیانی آنے سے کئی سڑکیں بند ہوئی تھی۔ پہاڑی علاقوں میں برساتی نالوں سے طغیانی میں بھاری پتھر اور ملبہ سڑک پر پڑنے سے یہ سرکیں ہر قسم ٹریفک کیلئے بند ہوئی تھی۔ جبکہ چار روزہ جشن قاقلشٹ کیلئے آنے والے سیاحوں کو بھی نہایت مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ گزشتہ رات شدید بارش کے بعد بونی کا شاہراہ موری لشٹ سے آگے بند ہوا تھا جس کی وجہ سے قاقلشٹ کا میلہ دیکھنے کیلئے آنے والے سیاحوں اور دیگر مسافروں نے سڑک پر کھلے آسمان تلے رات گزاری۔ 

تاہم محکمہ مواصلات (کمیونیکیشن اینڈ ورکس ) کے سب ڈویژنل آفیسر (ایس ڈی او) عتیق فاروق نے رات کو بھی مشنری روانہ کرکے سڑک کو ہلکے ٹریفک کیلئے کھول دیا تھا اور آج صبح انہوں نے ایک بار پھر مشنری لگا کر اسے ہر قسم ٹریفک کیلئے کھول دیا۔ 

شانگلہ سے آئے ہوئے ایک سیاح زہان الدین نے کہا کہ وہ سیر کیلئے قاقلشٹ جانا چاہتے تھے مگر گزشتہ رات یہاں بہت زیادہ سیلاب آیا اور وہ یہاں رات گزارنے پر مجبور ہوگئے اب چونکہ C&W والوں نے راستہ کھول دیا تو ہم ان کا مشکور ہیں کہ مسافروں کی مشکلات آسان ہوگئی۔

؂ایک اور سیاح عبد اللہ نے بتایا کہ رات کو سیلاب کی وجہ سے راستے بند ہوئے اور یہاں کوئی سہولت بھی نہیں تھی ہم نے صرف جان بچائی اور اب راستہ کھل گیا تو بخوشی اب بونی اور قاقلشٹ جائیں گے۔ 

ا س موقع پر محکمہ سی اینڈ ڈبلیو کے ایس ڈی او عتیق فاروق بھی موجود تھے انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش ہوگی کہ چار روزہ جشن قاقلشٹ کیلئے راستہ ہر وقت کھلا رہے اور یہاں ہم ایک گرنڈر مشین بھی کھڑا کریں گے۔ جونہی کوئی سیلاب آتا ہے یا ملبہ سڑ ک پر گرتا ہے اسے صاف کیا جائے گا تاکہ جشن قاقلشٹ کیلئے آنے والے سیاحوں کو کسی قسم کی مشکلات کا سامنا نہ ہو۔ 

مقامی شہری شیر عزیز بیگ نے کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی کے دور حکومت میں ضلعی انتظامیہ کو آٹھ عدد فور بائی فور ٹریکٹر دئے گئے تھے جن میں باقاعدہ آگے بلیڈ بھی لگا تھا وہ اس مقصد کیلئے حکومت نے دئے تھے کہ ان دور دراز علاقوں میں اگر سیلاب یا قدرتی آفات کی وجہ سے راستہ بند ہو تو اسے صاف کیا جائے مگر اب معلوم نہیں کہ وہ ٹریکٹر کہاں گئے اور کن افسروں کے ذاتی استعمال میں ہیں۔ 

بونی چترال کی شاہراہ کھلنے پر عوام نے محکمہ سی اینڈ ڈبلیو اور بالحصوص ایس ڈی او کا شکریہ اداکیا کہ ان کی بروقت کاروائی سے راستہ کھل گیا اور عوام کی مشکل آسان ہوگئی۔


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں