اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

28 مئی، 2019

چترال قاقلشٹ کی زمین ہتھیانے کا حکوت جلد نوٹس لے، بااثر خاندان 850 ایکڑ اراضی پر قبضہ کر رکھا ہے: رہنما تحریک انصاف

چترال قاقلشٹ کی زمین ہتھیانے کا حکوت جلد نوٹس لے، بااثر خاندان 850 ایکڑ اراضی پر قبضہ کر رکھا ہے: رہنما تحریک انصاف


چترال (ٹائمزآف چترال نیوز) حکمران جماعت تحریک انصاف کے مقامی رہنماؤں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ اپر چترال کے قاقلشٹ کے علاقے میں زمین پر قبضے کا نوٹس لیا جائے۔ تحریک انصاف رہنما منہاج الدین، آفتاب ایم طاہر اور ایڈوکیٹ غلام مصطفی نےالزام لگایا ہے کہ گلگت بلتستان کے ایک بارُسوخ خاندان نے ضلع انتظامیہ کے ساتھ مل کر 850 ایکڑ زمین پر قبضہ کر رکھا ہے۔

گزشتہ روز یہاں پریس کانفرنس کرتے ہوئے، انہوں نے الزام لگایا کہ خاندان نے جعلی دستاویزات کی بنیاد پر اپر چترال کے ضلع ہیڈکوارٹر بونی کے قریب قاقلشٹ میں ایک بڑی زمین کی زمین پر قبضہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ زمین کے قطعے کی ملکیت کے حوالے سے دستاویزات صوبائی حکومت کی آرکائیو لائیبریری پشاور سے تصدیق نہیں کی گئی تھیں جس کے تحت انہوں نے سابق تصفیہ آفیسر (سیٹلمنٹ آفیسر) سے زمین قبضہ کر لیا، جس کا دور میں 9 سال تک رہا تھا۔

صحافیوں کو دستاویزات دکھاتے ہوئے پی ٹی آئی رہنماؤں نے کہا کہ زمین کے موجودہ مالک نے زمین کی ملکیت ظاہر کرنے کے لئے حال ہی میں 1920 کی دہائیوں کا لیٹر لے آیا، جس سے یہ ثابت ہوا کہ اس کی اصل کاپی چترال کے عدلیہ کونسل کے ریکارڈ میں دستیاب نہیں تھا۔

انہوں نے کہا کہ ان دستاویزات جعلی ثابت ہونے کے بعد ، زمین کے موجودہ مالکان چچا اور بھتیجے نے ایک دوسرے کے خلاف مقامی عدالت میں کیس کردیا ، تاکہ دونوں میں سے کسی بھی پارٹی کی کامیابی سے زمین کی ان ملکیت ثابت ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ مقامی انتظامیہ ان کے خلاف دستاویزات میں جعل سازی ہیرا پھیری کے لئے مجرمان مقدمات شروع کرنے کے بجائے ابھی تک خاموش ہے۔ 

پی ٹی آئی کے رہنما ؤں نے کہا ہےکہ متنازع زمین پر غیر قانونی مالکان کی جانب سے ہاؤسنگ سکیم کا آغاز کیا گیا ہے، اور اس کے پلاٹس چترال کے معصوم لوگوں کو بھاری قیمتوں پر فروخت کئے جارہے ہیں جبکہ بونی روڈ پر شاپنگ پلازہ بھی تکمیل کے قریب ہے۔ انہوں نے زمین کے قبضے اور ان کے خلاف مجرمانہ مقدمات کا مطالبہ کیا ہے ۔


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں