اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

6 مئی، 2019

چترال باکمال محکمہ لاجواب سروس۔ محکمہ سی اینڈ ڈبلیو کے زیر نگرانی زیر تعمیر پُل میں ناقص میٹرییل استعمال کی جارہی ہے۔ ایس ڈی او نے مقدمہ درج کرنے کیلئے پولیس کو درخواست دی جبکہ ایگزیکٹیو انجنئیر نے ٹھیکدار کی حمایت کی۔

چترال باکمال محکمہ لاجواب سروس۔ محکمہ سی اینڈ ڈبلیو کے زیر نگرانی زیر تعمیر پُل میں ناقص میٹرییل استعمال کی جارہی ہے۔ ایس ڈی او نے مقدمہ درج کرنے کیلئے پولیس کو درخواست دی جبکہ ایگزیکٹیو انجنئیر نے ٹھیکدار کی حمایت کی۔ 



چترال (نامہ نگار) محکمہ مواصلات (کمیونیکیشن اینڈ ورکس) کے سب ڈویژنل آفیسر اور ٹھیکدار میں ٹھن گئی۔ تفصیلات کے مطابق تھانہ کوغذی کے ایس ایچ او کو محکمہ سی اینڈ ڈبلیو چترال کے سب ڈویژنل آفیسر عتیق فاروق نے تحریری درخواست دی ہے کہ موری بالا میں C&W کے زیر نگرانی ایک آر سی سی پُل کا ٹھیکہ اسمار ٹھیکدار کو دیا گیا تھا مگر اس نے یہ کام پی ٹی ٹھیکدار عرفان اللہ سکنہ ہری چند غیر قانونی طور پر دیا ہے جو محکمے کے ضوابط کے حلاف ہے اور اس میں کام بھی ناقص ہورہی ہے۔ چونکہ محکمہ سی اینڈ ڈبلیو کا ایس ڈی او غیر مقامی ہے اور اسی وجہ سے وہ سب کے ساتھ یکساں سلوک کررہا ہے کسی کا غیر قانونی حمایت نہیں کرتا مگر ایگزیکٹیو انجنیر مقبول اعظم مقامی ہونے کے ناطے وہ مقامی ٹھیکداروں کے حلاف کھلم کھلا کاروائی نہیں کرسکتا۔ 

اس معاملے میں بھی ذرائع نے بتایا کہ XEN اپنے محکمے کی بجائے ٹھیکدار کا حمایت کررہا ہے۔ چونکہ محکمہ سی اینڈ ڈبلیو میں ترقیاتی کاموں میں ایگزیکٹیو انجنیر وغیرہ کو گیارہ فی صد تک کمیشن ملتا ہے اور ان کی کوشش ہوتی ہے کہ وہ ٹھیکدار کو حفہ نہ کرے۔ 

موجودہ کیس اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ ہے کہ محکمہ کے SDO نے اس زیر تعمیر پل کا معائنہ کیا جس پر انہوں نے عدم اطمینان کا اظہار کیا اور غیر قانونی طور پر کام کرنے والے ٹھیکدار سے کام بند کروانا چاہا مگر ٹھیکدار نے ان کو دھمکی دی ہے جس پر ایس ڈی او نے باقاعدہ پولیس تھانہ کوغذی میں تحریری درخواست جمع کیا ہے مگر ذرائع کے مطابق پولیس بھی مقامی ہے اور وہ بھی مذکورہ ٹھیکدار کے حلاف کوئی کاروائی نہیں کرتی۔ 

مقامی لوگوں نے تبدیلی سرکار سے مطالبہ کیا ہے کہ اس سلسلے میں تحقیقات کرے اور چترال کے چوٹی کی آسامیوں پر کم از کم غیر مقامی افسران تعینات کرے تاکہ کسی کے ساتھ غیر قانونی طو ر پر اقربا ء پروری نہ کرے۔ اور ٹھیکدار سے بھی پوچھ گچ کیا جائے کہ وہ کیوں غیر معیاری میٹیریل استعمال کررہا ہے۔



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

www.myvoicetv.com

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں