اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

25 جولائی، 2019

چترال سے تیل کے ٹینکر میں لاکھوں روپے کی قیمتی عمارتی لکڑی سمگل کی کوشش ناکام، آئل ٹینکر خصوصی طور لکڑی سمگلنگ کے لئے تیار کیا گیا ہے، ملزم کو دھر لیا گیا

 

چترال سے تیل کے ٹینکر میں لاکھوں روپے کی قیمتی عمارتی لکڑی سمگل کی کوشش ناکام، آئل ٹینکر خصوصی طور لکڑی سمگلنگ کے لئے تیار کیا گیا ہے، ملزم کو دھر لیا گیا



چترال تیل کے ٹینکر میں لاکھوں روپے قیمتی عمارتی لڑکی کی اسمگلنگ ناکام۔

آئیل ٹینکر کو حصوصی طور پر دیار کی لکڑی اسمگلنگ کرنے کیلئے بنایا گیا ہے جس میں اس سے پہلے بھی محتلف علاقوں سے تیل کے بہانے عمارتی لکڑی اسمگل کیا گیا ہوگا۔ دو ملزمان گرفتار۔

چترال(گل حماد فاروقی)چترال سے تیل کے ٹینکر میں دیار کی قیمتی عمارتی لکڑی کی اسمگلنگ کو محکمہ جنگلات کے اہلکاروں نے ناکام بنایا دیا۔ آئیل ٹینکر کو کمال ہوشیاری سے پکڑ کر اسے سے دیار کی 56سلیپر برآمد کئے۔ تیل کا ٹینکر دیر کے رہایشی انعام اللہ نامی شحص کا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق تیل کی ٹینکر نمبر 9323 جو حصوصی طور پر دیار کی قیمتی لکڑی کیلئے ڈیزائن کیا گیا تھا اور بظاہر اس میں ڈیزل اور پٹرل لانے کیلئے استعمال ہوتا تھا مگر یہ ٹینکر پشاور سے حالی آتا تھا اور چترال آکر تیل کے ٹینکر کے اوپر سے باقاعدہ اس میں لوہا کاٹ کر لمبا دروازہ رکھا گیا تھا جسے بند کرے پتہ بھی نہیں چلتا کہ ٹینکر اوپر سے کاٹ کر اس میں حانہ بنایا گیا ہے۔ اس ٹینکر میں اوپر چھپا ہوا راستہ تھا جس کیلئے ٹینکر کی باڈی کو اوپر سے کاٹ کر اس میں قبضہ لگاتھا اور اسے باقاعدہ دروازے کی طرح کھولتا تھا اسی دروازے کے راستے ٹینکر کے اندر جتنا بھی حانہ تھا اس میں دیار کی قیمتی لکڑی رکھ کے اسے نیچے اضلاع اسمگل کیا جاتا تھا۔ 

سب ڈویژنل فارسٹ آفسیر دروش شریف اللہ کو مخبر نے اطلاع دی کہ ایک آئیل ٹینکرنمبر NWFP Peshawar E 9323میں نگر کے مقام پر دیار کی قیمتی لکڑی غیر قانونی طور پر اندر چھپاکر رکھا جاتا ہے اور اسے دیر کے راستے باہر اسمگل کیا جاتا ہے۔ شریف اللہ کے مطابق یہ ٹینکر دیر سے بھی حالی آئی تھی اس نے کوئی تیل نہیں لایا تھا اور صرف اس مقصد کیلئے حالی آیا تھا کہ اس میں لکڑی اسمگل کیا جاسکے۔



یہ ٹینکر رات کو ایک بجے نگر میں حفیہ مقام پر پہنچ گیا جہاں تین گھنٹوں تک اس میں 56 سلیپر (شاہ تیر) اندر چھپاکر رکھے گئے اورجونہی یہ ٹینکر مین روڈ پر آنے لگا محکمہ جنگلات کے عملہ نے اس پر چھاپہ مارکر اس کا راستہ روک دیا۔اس کے اندر جو دیکھا گیا تو پورا ٹینکر دیار کی لکڑیوں سے بھرا ہوا تھا۔ فارسٹ سٹاف نے ڈرائیور عادل شیر ولد چمن سکنہ مہمند ایجنسی حال مقیم مٹہ مغل خیل اور کنڈیکٹر سمیع اللہ ولد وکیل خان موقع پر گرفتار کئے۔ 

ڈرائیور نے بتایا کہ یہ ٹینکر دیر کے ایک بااثر شحصیت انعام اللہ کا ہے اور اسے پیسوں کا لالچ دیکر دیار کی لکڑی غیر قانونی طور پر اسمگل کیا جاتا تھا۔ 

ہمارے نمائندے نے دونوں سے الگ الگ انٹرویو لیا جس میں انکشاف ہوا کہ ان دونوں نے ٹینکر میں لکڑی لوڈ کرنے میں بھی حصہ لیا اورجب وہاں سے روانہ ہوئے تو اسی وقت ٹینکر کے مالک انعام اللہ نے ان کو فون کرکے اطلاع دی کہ گاڑی کو ایک طرف کھڑا کردے کیونکہ جنگلات والوں نے چھاپہ مارا مگر وہاں گاڑی چھپانے کی جگہہ ہی نہیں تھی اس کا مطلب ہے کہ ان سمگلروں کے ہاتھ بہت لمبے ہوتے ہیں اور فارسٹ عملہ جو رات کے تاریکی میں آرہا تھا اور گاڑی کی لائٹ بھی بھجایا ہوا تھا اس کے باوجود اسمگلر کو کیسے پتہ چلا یہ سوالیہ نشان ہے۔ 

محکمہ جنگلات کے عملہ نے گاڑی کو تحویل میں لیکر ابتدائی تفتیش شروع کردی کہ ان کے ساتھ چترال کا مقامی کون کون لوگ ملوث ہیں۔

SDFO شریف اللہ نے ہمارے نمائندے کو بتایا کہ ان کا ٹیم اکثر چترال میں گشت کرتا رہتا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ ان کے پاس کوئی ایسا سکینر، ڈیٹیکٹر یا کوئی آلہ نہیں ہے جس کی مدد سے وہ تیل کے ٹینکر یا مال بردار ٹرکوں میں مشین کے ذریعے معلوم کرسکے کہ ان کے اندر دیار کی لکڑی اسمگل تو نہیں ہورہی ہے۔ 

چترال کے سیاسی اور سماجی طبقہ فکر نے ایس ڈی ایف او شریف اللہ کی کمال مستعدی اور ایمانداری سے اپنا فرض نبھاتے ہوئے ان کو حراج تحسین پیش کی ہے اور حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ محکمہ جنگلات کو ایسے ٹیکنالوجی اور آلات دی جائے تاک وہ ان تیل کے ٹینکر اور ٹرکوں کے اندر سے بھی تلاشی کے دوران معلوم کرسکے کہ ان کے اندر کہیں دیار کی لکڑی باہر اسمگل تو نہیں ہورہا ہے۔ نیز لوگوں نے اس بات پر بھی تشویش کا اظہار کیا ہے کہ اس ٹینکر کو جو حصوصی طور پر صرف اس مقصد کیلئے بنایا گیا تھا جس میں تیل کی بجائے لکڑیوں کا اسمگل جاری تھا اس کے مالک اور ان کے شریک مجرموں کو سخت سزا دی جائے تاکہ آئندہ یہ لوگ جنگلات کو تباہ کرکے قیمتی لکڑی کو باہر اسمگل نہ کرے۔ 


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں