اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

20 اگست، 2019

بینک الفلاح مالیاتی نتائج کا اعلان کردیا، پہلی ششماہی میں بینک کے قبل از ٹیکس منافع میں 14 فیصد اضافہ

بینک الفلاح مالیاتی نتائج کا اعلان کردیا،  پہلی ششماہی میں بینک کے قبل از ٹیکس منافع میں 14 فیصد اضافہ 


ابوظہبی (پریس ریلیز19 اگست 2019) بینک الفلاح لمیٹڈ کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے بینک کی 30 جون 2019 کو اختتام پذیر ہونے والی پہلی ششماہی کے غیرآڈٹ شدہ عبوری مالیاتی نتائج کی 18 اگست 2019 کو ابوظہبی میں منظوری دے دی ہے۔ 

بینک کی سال 2019 کی پہلی ششماہی میں بلند شرح سود اور بہتر حجم کی مدد سے قبل از ٹیکس منافع گزشتہ سال کے مقابلے میں 14 فیصد زائد رہا۔ 

بینک نے سال کی پہلی ششماہی کے لئے دو روپے فی شیئر عبوری کیش ڈیویڈنڈ کا بھی اعلان کیا ہے۔ 

منی بجٹ 2019 میں سال 2017 کے منافع پر سپر ٹیکس چارج عائد ہونے کے باوجود بینک کا منافع 6.209 ارب روپے یا 3.5 روپے فی شیئر رہا جو پچھلے سال 6.039 ارب روپے یا 3.4 روپے فی شیئر تھا۔ 

گزشتہ سال کے مقابلے میں ریونیو میں 27 فیصد اضافہ ہوا۔ بڑھتے ڈسکاو ¿نٹ ریٹ، بڑھتے ہوئے اوسط ڈیپازٹس اور موثر بیلنس شیٹ کے انتظام سے خالص سودی آمدن میں اضافہ ہوا۔ گزشتہ سال حکومتی سیکورٹیز پر گین اور سال 2019 کی پہلی ششماہی کے دوران اسٹاک مارکیٹ کی نازک صورتحال کم کیپٹل گینز کی وجہ ہیں۔ فیس اور کمیشن کی آمدن گزشتہ سال اسی عرصے کے مقابلے میں 11 فیصد زیادہ رہی۔ 

انتظامی اخراجات میں گزشتہ سال اسی عرصے کے مقابلے میں 16 فیصد اضافہ ہوا۔ اسکی وجوہات ڈیپازٹ پروٹیکشن انشورنس ، جو نئی لیوی ہے، سالانہ انکریمنٹس، کسٹمر پروموشن ، ٹیکنالوجی سے مطابقت کے لئے بایو میٹرک کی تصدیق جیسی سہولیات، افراط زر میں ایڈجسٹمنٹ اور روپے کی گراوٹ ہیں۔ ان وجوہات کے باوجود ، لاگت کا تناسب آمدنی بہتر ہوکر 56 فیصد سے 52 فیصد ہوگیا ۔ 

اثاثہ جات کا معیار بدستور مستحکم رہا اور جون کے اختتام پر مجموعی نان پرفارمنگ قرضے مجموعی قرضوں کا 3.5 فیصد رہے جو دسمبر کے اختتام کے مقابلے میں معمولی کم ہے۔ پہلی ششماہی کے دوران نان پرفارمنگ قرضوں میں بھی 891 ملین روپے کی کمی آئی۔ 

بینک نے غیرسودی ڈیپازٹس پر اپنی توجہ مرکوز رکھی ہے اور غیرمنافع بخش کرنٹ ڈیپازٹس میں 16.9 فیصد اضافے کے ساتھ کاسا (CASA) مکس 30 جون 2019 پر 82.6 فیصد رہا ۔ بینک کی جانب سے فراہم کردہ مجموعی قرضے 511.097 ارب روپے رہے۔ سہ ماہی کے اختتام پر فراہم کردہ مجموعی قرضے کا ڈیپازٹس سے تناسب69 فیصد رہااور یہ بینکنگ انڈسٹری میں بدستور صف اول کا اشارہ ہے۔ 

پہلی ششماہی کے اختتام پر16.84 فیصد CAR کے ساتھ بینک مالی طور پر بہت حد تک مستحکم رہا۔ 

بینک الفلاح کے سی ای او نعمان انصاری نے بینک کی کارکردگی پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا، "ڈیجیٹل اور پیمنٹ کی صلاحیتوں پر سرمایہ کاری ہماری حکمت عملی کا بنیادی ستون ہے ۔ اس سے ہمارے کلائنٹس کو جدت انگیز خدمات حاصل ہوں گی جو انکی ضروریات اور سہولتوں کے مطابق ہونگی ۔ دوسری بات یہ ہے کہ ہم اسٹاف کے تجربے میں وسعت لانے والا ادارہ بننے کا عزم رکھتے ہیں جس سے ہماری کارکردگی کے ساتھ ہمارے کسٹمرز کے ساتھ تعلقات پر بھی مثبت اثر پڑے گا۔" 



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں