اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

3 اگست، 2019

فیس بک نے لاہور ویمنز چیمبر آف کامرس کے ساتھ اشتراک سے اپنے "شی مینز بزنس" پروگرام کو پاکستان میں توسیع دینے کا اعلان کردیا

 

فیس بک نے لاہور ویمنز چیمبر آف کامرس کے ساتھ اشتراک سے اپنے "شی مینز بزنس" پروگرام کو پاکستان میں توسیع دینے کا اعلان کردیا



فیس بک نے لاہور ویمنز چیمبر آف کامرس کے ساتھ اشتراک سے اپنے شی مینز بزنس پروگرام کو پاکستان میں توسیع کا اعلان کیا ہے، جس کا مقصد خواتین انٹریپرینئرز کو مختلف ٹولز، ٹریننگ اور رسورسز کے ذریعے ان کے کاروبار میں مدد فراہم کرنا ہے۔ تصویر میں (بائیں سے دائیں) راجہ یاسر ہمایوں، وزیر برائے ہائر ایجوکیشن اینڈ آئی ٹی؛ ڈاکٹر فاضیہ امجد، پریذیڈنٹ ڈبلیو سی سی آئی؛ ڈاکٹر شہلا جاوید، فا ¶نڈنگ پریذیڈنٹ ڈبلیو سی سی آئی اور مس بیتھ آن لم (دائیں) ہیڈ آف کمیونیٹی آفیئرز فیس، ایشیا پیسیفک پروگرام کا اجرا کر رہے ہیں


لاہور: فیس بک نے لاہور ویمنز چیمبر آف کامرس کے اشتراک سے پاکستان میں اپنے پروگرام شی مینز بزنس (SheMeansBusiness#) کو پھیلانے کا اعلان کیا ہے جس کے تحت کاروبار کرنے والی خواتین کو ضروری سامان، تربیت اور وسائل فراہم کئے جائیں تاکہ انہیں اپنا سرمایہ محفوظ بنانے اور اپنا کاروبار پھیلانے میں مدد ملے۔ 

فیس بک کی ہیڈ آف کمیونٹی افیئرز ایشیا پیسفک بیتھ این لم نے لاہور میں اس پروگرام کو متعارف کرانے کی تقریب میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا، "ڈیجیٹل ٹیکنالوجیز کی جانب سے فراہم کردہ سہولت دنیا بھر میں نئی نسل کی کاروباری خواتین کے لئے کارآمد ہے جس کی بدولت وہ اپنے اہل خانہ اور علاقے کے لئے مثبت کردار ادا کرسکتی ہیں۔ تاہم خواتین کو بہت سی رکاوٹوں کا سامنا ہوتا ہے جیسے سرمائے اور رابطوں کی کمی میں معاونت ملنے پر وہ ترقی کرسکتی ہیں اور اپنا کام آگے بڑھا سکتی ہیں۔ اس اشتراک کے ساتھ ہم پاکستانی کاروباری خواتین رہنماو ¿ں کی موجودہ اور مستقبل کی نسلوں کو مختلف ورکشاپس اور آن لائن لرننگ کے وسائل کی فراہمی کے ساتھ انہیں آگے بڑھانا چاہتے ہیں۔ " 

فیس بک، ورلڈ بینک اور او ای سی ڈی کے اشتراک سے قائم فیوچر آف بزنس رپورٹ کے مطابق پاکستان میں فیس بک پر کاروبار کرنے والی خواتین کو بدستور سرمائے کی کمی کے مسئلہ کا سامنا ہے۔ تقریبا ہر پانچ میں سے ایک خاتون کا کہنا ہے کہ انہوں نے بینک سے قرضہ لیا ہوا ہے یا کسی سے ادھار پیسے لئے ہوئے ہیں۔ اس سروے میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ فیس بک پر کاروبار کرنے والی ہر چار میں سے تین پاکستانی خواتین کا کہنا تھا کہ سوشل میڈیا سے انہیں اپنے کاروبارمیں مدد ملتی ہے۔ 

ویمنز چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی پریذیڈنٹ ڈاکٹر فائزہ امجد نے کہا کہ فیس بک جیسے آن لائن پلیٹ فارمز سے کاروبار کرنے والی خواتین کو اپنا کام پھیلانے میں مدد ملتی ہے۔ " جب خواتین کاروبار میں کامیاب ہوتی ہیں تو اس سے سماجی ترقی بھی آتی ہے، مزید خواتین برسرروزگار ہوتی ہیں، مزید نئے مثالی کردار تخلیق ہوتے ہیں اور اسے وسیع انداز سے تنوع پیدا ہوتا ہے۔ کاروبار کرنے والی کامیاب خواتین اپنے علاقوں اور بچوں کی تعلیم پر سرمایہ کاری کرتی ہیں۔ شی مینز بزنس (SheMeansBusiness#) سے اشتراک کے ساتھ ہم پاکستان کی کاروبار کرنے والی خواتین کو علم، رابطوں، مہارت اور ضروری ٹیکنالوجی کی فراہمی میں مدد فراہم کریں گے تاکہ وہ اپنا آن لائن کاروبار قائم کریں اور اس میں مزید وسعت لائیں۔" 

مک کنسے کے اشتراک سے گلوبل انٹریپرینیورشپ مانیٹر، او ای سی ڈی، ورلڈ بینک اور انٹرنیشنل فنانس کارپوریشن کی جانب سے مختلف اقسام کی تحقیق میں اس نکتہ پر زور دیا گیا ہے کہ خواتین کی معاشی ترقی سے متاثرکن انداز سے سماجی و معاشی اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ اقوام متحدہ کی اکنامک و سوشل کونسل سائٹ پر شائع کلنٹن گلوبل اینیشیاٹو کی حالیہ تحقیق کے مطابق جب خواتین کام کرتی ہیں، تو وہ مردوں کے 35 فیصد کے مقابلے میں 90 فیصد آمدن واپس اپنے گھرانے پر لگاتی ہیں۔ 

کاروباری رہنماو ¿ں، سول سوسائٹی، این جی اوز اور پبلک سیکٹر کے اشتراک سے قائم شی مینز بزنس (#SheMeansBusiness) پاکستان سمیت دنیا کے 21 ممالک میں فعال ہے اور ایشیاءپیسفک خطے میں اسکی رسورس مرکز (#SheMeansBusiness) کے ذریعے ایک لاکھ 30 ہزار سے زائد خواتین کو ڈیجیٹل مہارت کی تربیت فراہم کی جاچکی ہے۔ 






کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں