اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

16 اگست، 2019

کشمیری مسلمانوں کیساتھ اظہار یکجہتی کے لئے دروش میں عظیم الشان جلسہ، قوم پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑی ہے/مقرری

کشمیری مسلمانوں کیساتھ اظہار یکجہتی کے لئے دروش میں عظیم الشان جلسہ، قوم پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑی ہے/مقررین


چترال (گل حماد فاروقی ) کشمیری مسلمانوں کے ساتھ اظہار یکجہتی اور کشمیر میں بھارتی جبر و استبداد کے خلاف دروش میں ایک عظیم الشان احتجاجی ریلی نکالی گئی اور جلسہ منعقد ہوا۔ اس موقع پر دروش کے تمام ویلج کونسل ناظمین، کونسلرز، سپورٹس کلب و ویگر سول سوسائٹی تنظیمات اور سکولوں کے طلبہ نے شرکت کیں۔ اظہار یکجہتی کے جلسے رکن قومی اسمبلی مولانا عبدالاکبر چترالی،قاری جمال عبدالناصر، آل ویلج کونسلز فورم کے صدر ناظم عمران الملک، پرنسپل گورنمنٹ سیکنڈری سکول دروش محمد سلیم کامل،پی پی پی کے سرگرم اور سنیئر کارکن شیر جوان خان، مولانا کفایت اللہ و دیگر نے خطاب کیا۔ مقررین نے کہا کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے اور اسے کاٹنے کی کوشش کرنے والوں کی گردنیں اڑا دی جائینگی۔ مقررین نے کہا کہ بھارتی کی طرف سے وادی کشمیر میں بربریت کے بعد پاکستانی حکومت نے جو اقدامات اٹھائے ہیں ہم انکی مکمل تائید و حمایت کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پوری قوم پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑی ہے اور ہندوستان کو سبق سکھانے کے لئے ہمہ وقت تیار ہیں۔ رکن قومی اسمبلی مولانا عبدالاکبر چترالی نے کہا کہ انہوں نے قومی اسمبلی میں اور مختلف ٹاک شوز میں یہ موقف پیش کیا ہے کہ بھارت کے ساتھ ہر قسم تعلقات ختم کردئیے جائیں اور کشمیر کے مسئلے پر دوٹوک موقف اپنایا جائے۔انہوں نے حکومتی اقدامات کی تائید کرتے ہوئے کہا کہ مزید سخت اقدامات اٹھائے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم جنگ سے ڈرنے والے نہیں اور نہ ہی جنگ کی خواہش کرتے ہیں تاہم اپنے وقار اور پاکستان کی شہ رگ کے تحفظ کیلئے آخری حد تک جائینگے۔ مقررین نے کہا کہ ہندوستانی وزیراعظم نریندر مودی  اپنے جنگی جنون کی وجہ سے پوری دنیا کے امن کو تہس نہس کرنے کے درپے ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کو شرمناک ہزیمت کا سامنا کرنا پریگا۔ 

بعد ازاں نریندر مودی کا پتلا بھی نذر آتش کی گئی اور مودی اور حکومت ہندوستان کے خلاف زبردست نعرے بازی کی گئی۔


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

www.myvoicetv.com

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں