اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

23 اکتوبر، 2019

چترال محکمہ تعلیم کے زیر اہتمام انٹر سکول ٹورنمنٹ 2019 کا آغاز، فٹ بال ، کرکٹ ، ٹیبل ٹینس ، بیڈ منٹن اور رسہ کشی ٹیمیں حصہ لیں گی

چترال محکمہ تعلیم کے زیر اہتمام انٹر سکول ٹورنمنٹ 2019 کا آغاز، فٹ بال ، کرکٹ ، ٹیبل ٹینس ، بیڈ منٹن اور رسہ کشی ٹیمیں حصہ لیں گی



ٹورنمنٹ میں فٹ بال کے تیس ٹیمیں، کرکٹ کی تیس ٹیمیں،ٹیبل ٹینس کی 22 ٹیمیں، بیڈ منٹن کے 18 اور رسہ کشی کے 22 ٹیمیں حصہ لے رہے ہیں۔ 

چترال (گل حماد فاروقی) محکمہ تعلیم چترال کے زیر اہتمام انٹر سکول ٹورنمنٹ 2019 کا آغاز فٹ بال گراؤنڈ میں کردیا گیا۔ اس موقع پر ایک تقریب بھی منعقد ہوئی جس میں ایئریا کو آرڈینیٹر نگاہ حسین مہمان حسین جبکہ برطانوی خاتون پرنسپل میس کیری شوفیلڈ نے صدارت کی۔ تقریب میں محتلف سرکاری اور نجی سکولوں کے بچے کھیل کے میدان میں قطار میں کھڑے تھے۔جو اپنے سکول کا بینرز اٹھاکر کھڑے تھے۔ 

سب سے پہلے پرچم کشائی ہوئی قومی پرچم کو لہرایا گیا اور بچوں نے قومی ترانہ پیش کیا جس کی احترام میں تمام شرکاء احتراماً کھڑے ہوئے۔ اس کے بعد فرنٹئیر کور پبلک سکول کے بچوں نے پی ٹی کا مظاہرہ کیا۔ تمام سکول کے بچوں نے بہترین انداز میں سلامی کے چبوتر ے کے سامنے اپنے سکولوں کی نمائندگی کرتے ہوئے گزر گئے۔ 







بچوں نے حمد اور نعت شریف بھی پیش کی۔ 

اس موقع پر برطانوی خاتون میس کیری نے کہا کہ چترال نہایت دلچسپ جگہہ ہے جہاں شرح خواندگی حیرن کن حد تک زیادہ ہے اور لوگ بھی کھیل کود کے نہایت شوقین ہے۔ انہوں نے کہا کہ چترال کے بچوں میں کھیل کے حوالے سے جتنا ٹیلنٹ ہے اتنا مغربی ممالک کے کھلاڑیوں سے کسی بھی سطح پر کم نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر یہاں کے بچوں کو مواقع دی جائے تو یہ نہ صرف ملکی سطح پر اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرسکتے ہیں بلکہ بین الاقوامی سطح پر بھی ملک کا نام روشن کرسکتے ہیں۔

بعد میں سرکاری او ر نجی سکولوں کے اساتذہ پر مشتمل ایک فٹ بال میچ ہوا جس میں دونوں ٹیموں کے گول برابر رہے تاہم آحری وقت میں پرائیویٹ سکول فٹ بال ٹیم نے پینالٹی کے ذریعے سرکاری سکول اساتذہ فٹ بال ٹیم کو شکست دیکر میچ جیت لی۔ 

ہمارے نمائند ے سے باتیں کرتے ہوئے کرتے ہوئے اسسٹنٹ ایجوکیشن آفیسر سپورٹس چترال فاروق اعظم نے بتایا کہ یہ ٹورنمنٹ پندرہ نومبر تک جاری رہے گااس کے بعد ڈویژنل سطح پر مقابلے ہوں گے او راس کا بنیادی مقصد سرکاری اور نجی سکولوں کے طلباء کے درمیاں مقابلے کروانے ہیں تاکہ بچوں کو کھیل میں نام پیدا کرنے کا موقع مل سکے اور اس سے سیاحت بھی فروغ پائے گا۔

اس رنگارنگ تقریب اور میچ کو دیکھنے کیلئے کثیر تعداد میں تماشائی بشمول طلبا ء جمع ہوئے تھے۔



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

www.myvoicetv.com

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں