اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

30 اکتوبر، 2019

دیر کوہستان سے پسند کی شادی کرنے والے چترالی نوجوان کی لاش سڑک کے کنارے سے برامد۔

دیر کوہستان سے پسند کی شادی کرنے والے چترالی نوجوان کی لاش سڑک کے کنارے سے برامد۔

چترال ( گل حماد فاروقی) ایک سال پہلے دیر کوہستان سے پسند کی شادی کرنے والے نوجوان کی لاش شالی گول کے قریب سڑک کے کنارے ملی ہے ۔ جبکہ بیوی پُر اسرار طور پر لا پتہ ہے ۔ تفصیلات کے مطابق ایک سال پہلے گرم چشمہ کے مقام ایژ سے تعلق رکھنے والے نوجوان وقار احمد عرف شہنشاہ نے دیر کوہستان کی لڑکی سے پسند کی شادی کی ۔ اور اپنے گھر ایژ گرم چشمہ لے آیا ۔



کچھ عرصہ پہلے سوات سے تعلق رکھنے والے ایک شخص اپنی فیملی کے ساتھ گرم چشمہ میں رہائی اختیار کی ۔ جس کے ساتھ شہنشاہ اور اُس کی فیملی کے تعلقات بہت گہرے ہوئے ۔ دونوں فیملیوں کا ایک دوسرے کے ہاں آنا جانا تھا ۔ گذشتہ روز شہنشاہ کی حاملہ بیوی کو چترال شہر کے ہسپتال میں چیک اپ کرنے کیلئے ٹو ڈی کار میں دونوں فیملی کے افراد گرم چشمہ سے سے نکلے ۔ لیکن شام کو واپس گھر نہیں آئے ۔ جس پر موبائل پر اُن سے رابطہ کرنے کی کوشش کی گئی ۔ تاہم موبائل بند ہونے کی وجہ سے کسی سے بھی رابطہ نہیں ہو سکا ۔ ذراءع کے مطابق رات کو شہنشاہ شالی گول کے قریب سڑک کے قریب مردہ حالت میں پایا گیا ۔ جس کی لاش کو پوسٹ مارٹم کیلئے ڈی ایچ کیو ہسپتال چترال پہنچا دیا گیا ہے ۔ جبکہ اُس کی بیوی سمیت سوات سے تعلق رکھنے والے اُس خاندان کے بارے میں کوئی معلومات تا حال دستیاب نہیں ہیں ۔ اس حوالے سے متضاد خدشات ظاہر کئے جارہے ہیں ۔ کہ دوست نما دُشمن نے پسند کی شادی پر اُجرتی قاتل کا کردار ادا کیا ہے ۔ یا پسند کی شادی کا بدلہ لینے کیلئے لڑکی کے رشتے داروں نے یہ واردات کی ہے ۔ تاہم لڑکی اور سوات کے خاندان کی پُر اسرار طور پر لا پتہ ہونا ایک معمہ بنی ہوئی ہے ۔ اور اس نے چترال کے اندر پولیس کی کارکردگی پر بھی سوالیہ نشان اُٹھایاہے ۔

اس قسم کا ایک واقعہ پہلے بھی چترال میں ہوا تھا ۔ جس میں گرم چشمہ کی ایک خاتون کو راتوں رات کئی چیک پوسٹ عبور کرتے ہوئے کالا ڈھاکہ پہنچا دیا گیا تھا ۔ جس میں خاتون کی رہائی تقریبا ایک سال بعد ممکن ہوئی تھی ۔ اس خاتون کی اغوا کی وجہ یہ بنی تھی کہ اس کے خاندان میں ایک لڑکے نے کراچی سے ایک لڑکی سے پسند کی شادی کرکے لایا تھا۔


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

www.myvoicetv.com

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں