چترال میں فائیو سٹار ہوٹل بی جان کا سنگ بنیاد رکھ دیا گیا ، تقریب کے مہمان خصوصی زلفی بخاری تھے ، ہوٹل کے نام سے متعلق دلچسپ حقیقت سامنے آگئی : پڑھیئے

چترال میں فائیو سٹار  ہوٹل بی جان کا سنگ بنیاد  رکھ دیا گیا ، تقریب کے مہمان خصوصی زلفی بخاری تھے ، ہوٹل کے نام سے متعلق دلچسپ حقیقت سامنے آگئی : پڑھیئے

چترال (رپورٹ کریم اللہ 28 اکتوبر 2020)  چترال کی تاریخ کا ایک سنگ میل عبور ہوا چترال کے پہلے پانچ ستارہ ہوٹل بی جان پر کام کا باقاعدہ آغاز  ۔ وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے سمندر پار پاکستانی ذلفی بخاری کے ہاتھوں  اس ہوٹل کا سنگ بنیاد رکھا گیا۔



اس موقع پر چترال گانکورینی میں ایک پروقار تقریب کا انعقاد ہوا جس میں چترال سےتعلق رکھنے والے سیاسی و سماجی شخصیات بڑی تعداد میں شریک ہوئے ۔ سربراہ بی جان ہوٹل  انوار امان نےمہمانوں کو خوش آمد کہنے کے علاوہ ان کا شکریہ ادا کیا ۔ان کا کہنا تھا کہ چترال میرے لئے ماں کی مانند ہے جب بھی چترال آتا ہوں مجھے میری ماں جیسے پیار  کا احساس ہوتا ہے اسی لئے میں نے اپنے اس ہوٹل کو اپنی والدہ بی جان کے نام پر رکھا ہے اور یقینا ان کی روح کو تسکین مل چکی ہوگی ۔ ان کا کہنا تھا کہ اس ہوٹل کی وجہ سے دنیا بھر کے سیاح چترال کی جانب راغب ہونگے جبکہ اسی ہوٹل کی مدد سے  چترال کی خوبصورت ثقافت و تہذیب کو دنیا میں اجاگر کرنے میں  بھی مدد ملے گی ۔انہوں نے کہا کہ اس ہوٹل کی تعمیر کا مقصد چترال کے مقامی لوگوں کے لئے روزگار کے مواقع پیدا کرنا اور لوکل اکانومی کو بہتر بنانا ہے ۔ 

تقریب سے  انوار امان کے والد دست امان خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چترال معدنی اور پھلوں کی دولت سے مالا مال ہے آپ سارے لوگ چترال کی تعمیر و ترقی کے لئے کام کریں میرے بیٹے نے میری بات پر عمل کرتے ہوئے اس ہوٹل کا قیام عمل میں لایا آپ سب کو بھی اس علاقے کی بہتری کے لئے اپنی صلاحیتوں کو برائے کار لانا ہوگا۔ ذلفی بخاری  نے اپنے خطاب میں کہا کہ جب سے ہماری حکومت آئی ہے  ڈائریکٹ فارن انوسٹمنٹ میں اضافہ ہوا ہے ۔ چترال میں بی جان  ہوٹل کی تعمیر اس کی سب سے بڑی مثال ہے اس ہوٹل کی تعمیر سے یہاں روزگار کے نئے  مواقع پیدا ہونگے اور اس سے سیاحت کو فروغ ملے گا۔مسٹر بخاری نے اپنے خطاب میں کہا کہ  ہم بہت جلد برینڈ پاکستان لاؤنج کرنے جارہے  ہیں سیاحت سے متعلق ساری معلومات کو ایک ہی پورٹل میں ڈالا جارہا ہے ،اس کے علاوہ صوبوں کو ٹوارزم پالیسی دے کر ٹوارزم زونز بنا رہے ہیں جس کو انٹیگریٹڈ ٹوارزم زونز کہتے ہیں اور ایک آئی ٹی زون چترال میں بھی قائم کی جائے گی  ۔

انہوں نے بتایا کہ جب سے میں چترال پہنچا ہوں ائیر پورٹ سے لے کر یہاں تک سڑکوں کی سب سے زیادہ ڈیمانڈ آئی ہے، سیاحت کے فروع کے لئے روڈ انفراسٹریکچر لازمی ہے چونکہ چترال میں روڈ انفراسٹریکچر کا بڑا مسئلہ رہا ہے لہذا چترال میں سڑکوں کی تعمیر پر بہت جلد کام کا آغاز کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ چترال بونی شندور روڈ کی فیڈرلائزیشن مکمل ہوچکی ہے اوراس کا ٹینڈر بھی ہوا ہے بہت جلد اس پر کام کا آغاز کیا جائے گا، اس کے علاوہ چترال گرم چشمہ روڈاور  کیلاش ویلی روڈ پر بھی بہت جلد کام کا آغاز کیا جائے گا۔

پروگرام میں نظامت کے فراہم اسرار صبور سرانجام دئیے ۔ پروگرام کے اختتام پر  خطیب شاہی مسجد چترال مولانا خلیق الزمان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس پروگرام اور یہاں ہونے والی تقریروں سے اندازہ ہوا کہ انوار امان نے یہ ہوٹل خالص کاروباری مقصد کے لئے نہیں بلکہ چترال میں ترقی کے نئے دروازے  کھولنے کے لئے تعمیر کررہے ہیں اللہ ان کو اس مشن میں کامیاب کریں۔




1 Comments

Thank you for your valuable comments and for taking the time to point out options to improve our service. Please have your opinion on this post below.

Post a Comment

Thank you for your valuable comments and for taking the time to point out options to improve our service. Please have your opinion on this post below.

Previous Post Next Post