-->

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

23 نومبر، 2020

کووڈ 19 کیسز اور دوسری لہر ۔ حکومت پاکستان نے تمام تعلیمی ادارے بند کرنے کا بڑا اعلان، 26 نومبر سے 24 دسمبر تک بند رہیں، تاہم تعلیم کا سلسلہ آن لائن جاری رہے گا : تفصیل لنک پر

 

کووڈ 19 کیسز اور دوسری لہر ۔ حکومت پاکستان نے تمام تعلیمی ادارے بند کرنے کا بڑا اعلان،  26 نومبر سے 24 دسمبر تک بند رہیں، تاہم تعلیم کا سلسلہ آن لائن جاری رہے گا : تفصیل لنک پر



اسلام آباد (ویب ڈیسک 23 نومبر 2020) کووڈ 19 کیسز کی تازہ لہر ۔ حکومت پاکستان نے تمام تعلیمی ادارے بند کرنے کا بڑا اعلان کردیا ہے۔  26 نومبر سے 24 دسمبر تک بند رہیں، تاہم آن اور ریسورس پیک سے تعلیم کا سلسلہ آن لائن جاری رہے گا۔ اور سکول کا عملہ سکول آسکے گا۔   اسکولز چاہیں تو ہفتہ میں ایک دن وہ بچوں کو بلا سکیں گے تاہم اس سلسلے میں صوبے اپنی پالیسی بنا سکیتے ہیں. تاہم 25 دسمبر سے 10 جنوری تک موسم سرما کی تعطیلات ہوں گی۔ 

تفصیلات کے مطابق بین الصوبائی وزرائےتعلیم کااجلاس کے بعد وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود اور معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل نے مشترکہ پریس کانفرنس کی۔

وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا کہ ایسے اقدامات کرناپڑیں گے جس سے بیماری کا پھیلاؤ روکا جاسکے، 26نومبر سے پاکستان کے تمام تعلیمی ادارےبند کرنے کافیصلہ ہواہے، بچے گھر سے بیٹھ کر اپنی تعلیم کو جاری رکھیں گے ، آن لائن اور ہوم ورک کےذریعے بچوں کو پڑھایا جائے گا، بچوں کے آن لائن اور ہوم ورک سےمتعلق فیصلہ صوبائی حکومتیں فیصلہ کریں گی۔

شفقت محمود کا کہنا تھا کہ 26 نومبر سے 24دسمبر تک پاکستان کے تمام تعلیمی ادارے بند رہیں گے جبکہ 25دسمبر سے 10جنوری تک بچوں کی موسم سرما کی تعطیلات ہوں گی، امید کرتے ہیں حالات بہتر ہونے پر 11 جنوری کو تعلیمی ادارے کھولے جائیں گے، جنوری کے پہلے ہفتے میں صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا۔

وفاقی وزیر نے دسمبر میں ہونے والے تمام امتحانات15جنوری تک ملتوی کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تعلیمی اداروں کے انٹری ٹیسٹ معمول کے مطابق ہوں گے جبکہ مئی،جون میں بورڈ امتحانات لینے کی کوشش کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ یونیورسٹی کے ہاسٹل میں طلبہ کاایک تہائی حصہ رہےگا، ہرممکن کوشش کی جائے گی کہ پڑھائی کاسلسلہ گھروں سےجاری رہے۔

دوسری جانب معاون خصوصی ڈاکٹر فیصل نے کہا اس موقع پر اہم فیصلے نہ کئے تو بیماری کےپھیلاؤکا خدشہ ہے، کورونا کےکیسز بڑھے تو اسپتالوں پر دباؤ بڑھ سکتاہے، این سی اوسی میں وبا کی نوعیت پر بات ہوئی۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

www.myvoicetv.com

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں