-->

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

23 نومبر، 2020

نیوزی لینڈ کی حکومت نے مسلم حجاب کو اپنی پولیس یونیفارم کا حصہ بنادیا

 

نیوزی لینڈ کی حکومت نے مسلم حجاب کو اپنی پولیس یونیفارم کا حصہ بنادیا



نیوزی لینڈ  (ویب ڈیسک) نیوزی لینڈ کی حکومت نے مسلم حجاب کو اپنی پولیس یونیفارم کا حصہ بنادیا۔ پولیس میں نئی بھرتی ہونے والی کانسٹیبلز زینا علی ملکی تاریخ کی پہلی باحجاب خاتون پولیس اہلکار ہیں۔ نیوزی پولیس ترجمان کے مطابق پولیس یونیفارم میں حجاب کو باضابطہ طور پر شامل کیے جانے کا مقصد ایک متنوع برادری کی عکاسی کرنا ہے ۔
نیوزی لینڈ پولیس کے مطابق حجاب کو یونیفارم میں باضابطہ طور پر شامل کیے جانے کا فیصلہ 2018 میں پولیس اسٹاف کی جانب سے موصول درخواست پر کیا گیا۔ 

نیوزی لینڈ پولیس کے مطابق  مسلم خواتین کو ترغیب دینے کے لیے حجاب پولیس یونیفارم کا حصہ بنادیا گیا ہے۔ بحر الکاہل کے جزیرے فجی میں پیدا ہونے والی کانسٹیبل زینا علی بچپن میں ہی فیملی کے ہمراہ نیوزی لینڈ شفٹ ہوگئی تھیں۔ زینا علی نے غیر ملکی خبر رساں ادارے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کرائسٹ چرچ پر قاتلانہ حملےکے بعد میں نے پولیس ڈیپارٹ جوائن کرنے کا فیصلہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ میں نے محسوس کیا کہ زیادہ سے زیادہ مسلم خواتین کو محکمہ پولیس میں شامل ہونے کی ضرورت ہے تاکہ لوگوں کی مدد کرسکیں۔  زینا کے مطابق انہیں حجاب کو یونیفارم میں باضابطہ طور پر شامل ہوتا دیکھ کر فخر محسوس ہورہا ہے، امید ہے کہ دیگر مسلم خواتین بھی اس سے متاثر ہوکر پولیس کا حصہ بننے میں فخر محسوس کریں گی۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

www.myvoicetv.com

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں