معیاری تعلیم ۔ آغاخان ایجوکیشن کے سکولوں سے رواں سال 8 طالب علموں نے ایم بی بی ایس پروگرام کے لئے کوالیفائی کئے

معیاری تعلیم ۔ آغاخان ایجوکیشن کے   سکولوں سے   رواں سال 8 طالب علموں نے ایم بی بی ایس پروگرام کے لئے کوالیفائی کئے

کراچی ( ٹائمزآف چترال  نیوز20 جنوری 2021)  تعلیم وہی ہے جس کا کوئی معیار ہو۔  سمجھدار والدین اپنے بچوں کی معیاری تعلیم کے لئے بڑے فکر مند  رہتے ہیں ۔ بہت سے والدین اپنے بچوں کی تعلیم پر  اپنی ساری دولت بھی لٹانے کے لئے تیار ہوتے ہیں پاکستان میں ایسے ایسے سکول ہیں جن کی فیس بہت زیادہ ہے۔  ان سکولوں میں صرف امیر ترین لوگ ہی اپنے بچوں کو بھیج سکتے ہیں۔ سرکاری سکولوں کا معیار  چونکہ اس لیول کا نہیں ہے جس لیول کی تعلیم آج کے دور میں چاہئے۔ چونکہ سرکاری سکولوں میں پرانے اساتذہ ہیں جن کی تعلیم دور حاضر سے ہم آہنگ نہیں ہے۔ حکومت اگرچہ  ان بہت اچھی تنخواہیں دیتی ہے لیکن ان کی تربیت اور دور حاضر کے تعلیم چیلنجوں سے مقابلے کے لئے تیار نہیں کرتی۔ 

 مہنگے اداروں کے ساتھ ساتھ ملک میں ایسے ادارے بھی ہیں جن کی فیس بھی اتنی زیادہ نہیں لیکن اس کے باوجود یہ تعلیمی معیار پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کرتے  ایسے اداروں میں ایک آغا خان ایجوکیشن سروس پاکستان کے سکولز ہیں۔ یہاں فیس اتنی زیادہ نہیں ہے لیکن انہوں نے ملک کو  تعلیم یافتہ ، بہترین پیشہ ور دے دیئے ہیں۔  ہر سال ان سکولوں سے ڈاکٹر ز، انجینئرز، ٹیکنالوجسٹ اور دیگر ماہرین پیدا کئے ہیں۔ اس سال بھی   آغاخان ایجوکیش کے سکولوں سے 8 طلباء آغا خان یونیورسٹی میڈیکل کالج کے ایم بی بی ایس پروگرام کوالیفائی کرلیا ہے۔ ان میں  آغا خان سکول گلگت اور چترال کے طلباء شامل ہیں۔

آغا خان ہائر سیکنڈری اسکول ہنزہ سے عابدہ علی ، ملیحہ شاہ اور زہرا یاسمین ہیں۔ آغا خان ہائر سیکنڈری اسکول ، گہخوچ سے کنول ناصر اور انیتا قیوم آغا خان ہائر سیکنڈری اسکول چترال سے ؛ زہیب علی اور صبور علی خان  اورآغا خان ہائر سیکنڈری اسکول گلگت سے شاہد اقبال  شامل ہیں۔

Post a Comment

Thank you for your valuable comments and for taking the time to point out options to improve our service. Please have your opinion on this post below.

Previous Post Next Post